May 19, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/farmington-realestate.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
مسؤول السياسة الخارجية في الاتحاد الأوروبي جوزيب بوريل

یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزپ بوریل نے زور دے کر کہا ہے کہ جنگ بندی کے معاہدے اور غزہ کی پٹی میں قیدیوں کے تبادلے کے فوراً بعد انتقال اقتدار کی سیاسی منتقلی ہونی چاہیے۔

بوریل نے حماس کی طرف سے جنوبی اسرائیل پر کیے گئے حملے کی اپنی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ “اس اندھا دھند حملے سے حماس نے خود کو مکمل طور پر نااہل قرار دے دیا”۔ انہوں نے کہا کہ یہ تحریک فلسطینی عوام کی نمائندگی نہیں کر سکتی۔

دو ریاستی حل واحد راستہ

انہوں نے کہا کہ “ایک بار جب یرغمالیوں کو رہا کر دیا جاتا ہے اور جنگ بندی ہو جاتی ہے تو فوری طور پر سیاسی منتقلی ہونی چاہیے۔میرے خیال میں دو ریاستی حل ہی “پائیدار امن کے حصول کا واحد راستہ ہے”۔

انہوں نے کہا کہ یورپی یونین عالمی برادری کے شانہ بشانہ موثر مدد فراہم کرنے کے لیے تیار ہے۔

غزہ پر اسرائیلی بمباری عمارتیں کھنڈرات میں تبدیل

غزہ پر اسرائیلی بمباری عمارتیں کھنڈرات میں تبدیل

مذاکرات کا نیا دور

یہ بیانات ایک ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب مصری دارالحکومت قاہرہ اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی اور قیدیوں کے تبادلے پر مذاکرات کے ایک نئے دور کی میزبانی کر رہا ہے، جس میں قطر اور امریکہ کے وفود کی شرکت سے “رکاوٹوں کو دور کرنے” کی کوشش کی جا رہی ہے۔

اسرائیلی اخبار’ہارٹز‘کے مطابق ایک اسرائیلی ذریعے نے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ اتوار کی شام قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے کے لیے ایک نئی تجویز پیش کرے گا، جس کے لیے اسرائیل اور حماس دونوں سے بڑی رعایتیں درکار ہوں گی۔

ذریعے کا کہنا ہے کہ مذاکرات میں امریکہ کی شرکت اسرائیل پر دباؤ ڈال کر تعطل کو ختم کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔

اسرائیل کے ایک دوسرے اخبار’یدیعوت احرونوت‘ نے رپورٹ کیا کہ اسرائیلی مذاکراتی وفد اتوار کو قاہرہ پہنچا۔ توقع ہے کہ وہ قطری وزیر خارجہ الشیخ محمد بن عبدالرحمٰن آل ثانی، مصری انٹیلی جنس کے سربراہ عباس کامل اور سی آئی اے کے ڈائریکٹر ولیم برنز سے ملاقات کرے گا۔

اس کے علاوہ حماس نے اتوار کی شام اعلان کیا کہ اس کا وفد جنگ بندی اور قیدیوں کے تبادلے پر مذاکرات کے لیے قاہرہ پہنچا جہاں اس نے مصری انٹیلی جنس چیف عباس کامل سے ملاقات کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *