April 20, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/farmington-realestate.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
بحیرہ احمر میں ایک بحری جہاز

ایک یورپی سفارت کار نے العربیہ کو تصدیق کی کہ بحیرہ احمر میں بحری جہازوں کی حفاظت کے لیے یورپی بحری آپریشن پیر سے شروع ہو گا۔ سفارت کار نے کہا یورپیوں نے خطے کے عرب ممالک کے ساتھ یورپی بحری بیڑے کے مشن کے بارے میں وسیع مشاورت کی ہے۔ انہوں نے حوثیوں کو مطلع کیا ہے کہ یورپی افواج زمین پر کارروائیاں نہیں کریں گی۔

جبوتی سپورٹ پوائنٹ

انہوں نے یہ بھی کہا کہ یورپی یونین نے واشنگٹن اور لندن کو بحیرہ احمر میں یورپی آپریشن کے منصوبوں کی تفصیلات سے آگاہ کیا اور تجویز کیا کہ جبوتی بحیرہ احمر میں یورپی آپریشن کے لیے لاجسٹک سپورٹ کا پوائنٹ ہو گا۔

یورپی سفارت کار نے نشاندہی کی کہ یورپی بحری بیڑے کا مشن بحیرہ احمر میں پراجیکٹائل اور ممکنہ خطرات کو روکنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فرانس، اٹلی اور جرمنی کے 3 جنگی بحری جہاز اب بحیرہ احمر میں آگے بڑھ رہے ہیں۔

سمندری سفر کا تحفظ

یوروپی یونین نے اعلان کیا ہے کہ بین الاقوامی سطح پر اہم شپنگ لین میں نیوی گیشن کی حفاظت کے لیے جلد ہی ایک یورپی بحری مشن شروع کیا جائے گا جسے “گارڈین آف پراسپیریٹی” اتحاد میں شامل کیا جائے گا۔ اس اتحاد کا اعلان امریکہ نے گزشتہ دسمبر میں کیا تھا۔

یونین کے خارجہ امور کے ترجمان سٹینو نے کہا کہ یورپی ممالک نے اپنے سمندری مشن میں بہت گہرا کام شروع کیا ہے۔ یہ مشن بحیرہ احمر میں تجارتی بحری جہازوں کو کسی بھی قسم کے غیر قانونی اور غیر قانونی حملوں سے بچائے گا اور اس مشن کا مقصد حوثیوں پر دباؤ ڈالنا ہے۔

خوشحالی کا محافظ

یاد رہے امریکہ اور برطانیہ کی قیادت میں “گارڈین آف پراسپرٹی” اتحاد نے گذشتہ ہفتوں کے دوران یمن میں حوثیوں کے متعدد ٹھکانوں پر حملے کیے تھے۔ ان حملوں کا مقصد ایرانی حمایت یافتہ حوثیوں کی بحری جہازوں پر حملے کی صلاحیت کو محدود کرنا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *