April 20, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/farmington-realestate.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Israeli soldiers operate in the Gaza Strip amid the ongoing conflict between Israel and the Palestinian group Hamas, in this handout picture released on February 17, 2024. Israel Defense Forces/Handout via REUTERS THIS IMAGE HAS BEEN SUPPLIED BY A THIRD PARTY

برطانیہ میں انسانی بنیادوں پر کام کرنے والے ایک غیر سرکاری ادارے ‘ لیگل ایڈوکیسی گروپ’ نے لندن ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی تھی کہ غزہ میں انسانی ہلاکتوں کی اتنی بڑی تعداد کے پیش نظر برطانوی حکومت کو حکم دیا جائے کہ اسرائیل کو اسلحہ کی برآمد روک دے ۔

عدالت کا یہ فیصلہ اسی روز آیا ہے جب برطانوی حکومت نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں جنگ بندی قرارداد کے حق میں ووٹ دینے کے بجائے ووٹ کا استعمال ہی نہیں کیا ہے۔

یہ درخواست ماہ جنوری میں دائر کی گئی تھی۔ تاکہ عدالت برطانیہ ک طرف سے اسرائیل کو اسلحے کی ترسیل کا جائزہ لے سکے کہ ان حالات میں برطانیہ کو اسرائیل کو اسلحہ برآمد کرنا چاہیے۔ واضح رہے اسرائیلی بمباری سے اب تک غزہ میں 29195 فللسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں بری تعداد فلسطینی بچوں اور خواتین کی ہے۔

درخواست کے مطابق برطانیہ کا سٹریٹجک لائسنسنگ کی ترجیحات میں یہ واضح ہے کہ اسلحہ کسی ایسے ملک کو نہیں دیا جائے گا جس کے بارے میں خدشہ ہو گا کہ اسلحہ بین الاقوامی قوانین کے خلاف استعمال کیا جا سکتا ہے۔ درخواست دائر کرنے والوں میں ‘لیگل ایڈووکیسی گروپ ‘کے علاوہ فلسطینی حقوق گروپ ‘ الحق ‘ بھی شامل ہے۔ کا موقف ہے کہ برطانیہ اس سلسلے میں اپنے ہی قوانین کی خلاف ورزی کر رہے ہے۔

مگر عدالت نے اس درخواست کو مسترد کر دیا ہے۔ یہ بات درخوست گزاروں کے وکلاء کی طرف سے منگل کے روز بتائی گئی ہے۔ وکلاء نے کہا ہے کہ وہ اس عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل دائرکریں گے۔ فلسطین کے حامی کئی گروپوں نے کئی ایسی درخواسیں دائر کی ہیں جن کا مقصد اسرائیل کو اسلحہ کی فراہمی روکنا ہے۔

ماہ فروری کے وسط میں ہیگ کی ایک مقامی عدالت نے ہالیند کی حکومت کو حکم جاری کیا ہے کہ اسرائیل کو امریکی ساختہ ایف 35 طیاروں کے فاضل پرزے فراہم نہ کیے جائیں ۔ ایف 35 جنگی طیاروں کے فاضل پرزے اسرائیل کو ہالینڈ کے توسط سے فراہم کیے جاتے ہیں عدالت نے اس سے روک دیا ۔

اس سے قبل برطانیہ میں ایک فیکٹری کے سامنے مظاہرین نے احتجاج کر کے اسرائیل کو اسلحہ کی فراہمی سے روکنے کے لیے آواز اٹھائی تھی۔ م کئی یورپی ملکوں میں ٹریڈ یونینوں نے اسرائیل کو اسلحہ فراہم کرنے کے کاموں کا بائیکاٹ کرنے کا اعلان کر رکھا ، ادھر بھارت کی ٹریڈ یونین کی فیڈریشن نے بھی ایسے کارگو جہازوں کے لیے کام کرنے سے انکار دیا ہے جو اسلحہ لے کر اسرائیل جارہے ہوں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *