April 17, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/farmington-realestate.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Families of staff of international organisations carry their belongings to shelter at a United Nations center after UNRWA said it relocated its central operations centre to the south of Gaza Strip after Israel's call for more than 1 million civilians in northern Gaza to move south within 24 hours, amid the Israeli-Palestinian conflict, in Khan Younis in the southern Gaza Strip October 13, 2023. REUTERS/Ibraheem Abu Mustafa

امریکہ نے غزہ میں امدادی کارکنوں کے تحفظ کے لیے 53 ملین ڈالر کی رقم کا اعلان کیا ہے۔ یہ اعلان منگل کے روز امریکی امداد کی سربراہ نے جنگ زدہ غزہ میں امدادی اشیا کی محفوظ تقسیم کے لیے کیا ہے۔

امریکہ کا بین الاقوامی سطح پر امدادی کاموں سے متعلق ادارے ‘یو ایس ایڈ ‘یہ امداد عالمی پروگرام برائے خوراک اور دوسرے غیر حکومتی اداروں کے توسط سے بروئے کار لائے گا۔

اردن سے ویڈیو لنک پر اعلان کرتے ہوئے یو ایس ایڈ کی ایڈمنسٹریٹر سمانتھا پاور نے کہا یہ ان لوگوں کی لیے امداد ہے جو اس وقت ضرورت مندوں تک پہنچ رہے ہیں۔

یہ امداد ان امدادی کارکنوں کو جائے گی جو اپنی زندگیوں کو خطرے میں ڈال کر لوگوں تک خوراک پہنچا رہے ہیں ۔ اس لیے اس امریکی امداد سے ان کے تحفظ کا بندو بست کیا جائے گا۔

‘یو ایس ایڈ کی ایڈمنسٹریٹر ‘نے کہا ‘ وہ امدادی کارکن اپنا کام کرنا آنا چاہیے، کہ کس طرح کس طرح گولیوں سے بچتے ہوئے اور مرنے سے بچ کر اپنا کام کرنا ہے۔ تاہم سمانتھا پاور نے اس موقع پر یہ ذکر نہیں کیا کہ غزہ پر اس مداد کے استعمال کے وقت کنٹرول کس کا ہوگا حماس کا اسرائیل کا۔

واضح رہے سات اکتوبر سے اب تک فلسطینیوں کے لیے امریکہ نے مجموعی طور پر 180 ملین ڈالر کی رقم مدد کے لیے دی ہے۔ تاکہ غزہ میں اسرائیل کی طرف سے مسلسل بمباری کے دوران تعاون کیا جا سکے۔

اس سے پہلے امریکی امداد طیاروں کے ذریعے مصر کے راستے آتی رہی ہے۔ جسے رفح راہداری سے غزہ پہنچایا جاتا رہا۔ لیکن بعد ازاں امریکہ اور مغربی ملکوں نے ‘ اونروا’ کی امداد معطل کر دی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *